Students Petition 27

پاکستان میڈیکل اینڈ ڈینٹل کونسل ترامیم ایکٹ 2015 کے خلاف درخواستوں پر سماعت

نیوزویوز:(لاہور) لاہور ہائی کورٹ نے اے لیول۔او لیول پاس طلباء Students Petition کی جا نب سے پاکستان میڈیکل اینڈ ڈینٹل کونسل ترامیم ایکٹ 2015 کی قانونی حیثیت کے خلاف درخواستوں پر سماعت ہوئی . مسٹرجسٹس شمس محمود مرزا نے اے لیول اور او لیول پاس طلبعلمون کی درخواستوں کو سماعت کے لئے دو رکنی بینچ میں بھجوا دیا
۔
مسز جسٹس عائشہ اے ملک اور مسٹر جسٹس جواد حسن پر مشتمل بنچ کل ان درخواستوں پر سماعت کرے گا عدالت نے یہ حکم اے لیول پاس کرنے والی طالبہ را بیل عطا باجوہ اور دیگر طالبات کی درخواست پر دیا

درخواستگزار نے موقف اپنایا کے وہ اہم بی بی ایس اور بی ڈی ایس 2017 میں داخلہ لینا چاہتے ہیں ۔اے لیول اور او لیول کرنے والے طلبعلمون پر پی ایم ڈی سی کی نئی پالیسی کا اطلاق نہیں ہوتا ۔وہ پہلے ہی سیٹ پاس کر چکے ہیں اور انٹری ٹیسٹ کا ان پر اطلاق نہیں ہوتا ۔ایف ایس سی پاس کرنے والے رٹا لگا کے امتحان پاس کرتے ہیں اس لئے انٹری ٹیسٹ انکے لئے لازمی ہے ۔اس ترامیمی ایکٹ کی پارلیمنٹ سے منظوری نہ لی گئ ۔جس پر یہ ایکٹ از خود تحلیل ہو گیا ۔ عدالت اس کا نوٹس لے اور اے لیول اور او لیول کرنے والے طلبعلمون پر اس عائد شرط کو غیر قانونی قرار دے ۔
۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں