12

باباگورونانک یونیورسٹی کے ننکانہ صاحب میں قیام کے لئے بنائی گئ کمیٹی کا دوسرا باضابطہ اجلاس

نیوز ویوز (سلمان خالد لاہور):”باباگورونانک یونیورسٹی کے ننکانہ صاحب میں قیام کے لئے بنائی گئ کمیٹی کا دوسرا باضابطہ اجلاس““
تفصیلات کے مطابق وفاقی وزیر چوہدری برجیس طاہر کی زیر صدارت باباگورونانک انٹرنیشنل یونیورسٹی کے ننکانہ میں قیام کے لئے بنائی گئ کمیٹی کا دوسرا باضابطہ اجلاس کل 22زمان پارک لاہور میں ہوا۔اجلاس میں کمیٹی کے صدر برجیس طاہر نے کہا کہ ننکانہ بار(وکلا)کے ساتھ میرے کامیاب مزاکرات قائم ہوگئے ہیں انشاللہ آئندہ وکلا کمیٹی کے اجلاس کا حصہ ہونگے۔ اجلاس میں متاثرہ مزارعین کی نمائندگی کرنے والے انجمن مزارعین کے صدر رانا ایوب نےتجاویز پیش کرتے ہوئے کہا کہ ہماری زمین کے بدلے میں معقول جگہ،معاوضہ،یا کوئی بہتر لائحہ عمل اختیار کیا جائےمیں امید کرتا ہوں کہ یہ کمیٹی ہمارے مطالبات کو پورا کے گی۔اجلاس میں یہ طہ پایا کہ آئندہ اتوار کو ایم پی ایز ملک ذولقرنین ڈوگر،اور رانا جمیل حسن گڈ خاں متاثرہ تقریبا(33 کے قریب)کے ساتھ مزاکرات کرے گی۔اور ان کے مطالبات کو حتمی شکل دے کر آئندہ اجلاس میں کمیٹی کے سامنے رکھے گی۔اجلاس میں ایم پی اے ملک ذولقرنین ڈوگر کا کہنا تھا کہ کچھ دنوں پہلے میری CM میاں محمد شہباز شریف صاحب سے ملاقات ہوئی تھی۔میں نے انکو باباگورونانک انٹرنیشنل یونیورسٹی کے ننکانہ میں قیام کے حوالے سے تمام باتوں سے آگاہ کیا جس پر انھوں نے کمیٹی اور چئرمین صدیق الفاروق کی کاوشوں کا سراہتے ہوئے کہا ہے کہ میں خود بھی صدیق الفاروق صاحب کو اس حوالے سے ملوں گا۔اور جب کمیٹی تمام معاملات طے پالے گی تو پھر میں خود ننکانہ کے تمام عوامی نمائندگان کو بلا کر باباگورونانک انٹرنیشنل یونیورسٹی کے ننکانہ میں قیام کا باضابطہ اعلان کرو گا۔
اس موقع پرایم پی اے رانا جمیل حسن گڈ خاں کا کہنا تھا کہ اس یونیورسٹی کےماناوالہ روڈ پر بنانے پر اتفاق ہوا تھا۔اگر وکلا یہ بات مانتے ہیں کہ پہلے یونیورسٹی باقی معاملات بعد میں تو وکلا کو کمیٹی کے اس فیصلے پر کوئی اعتراض نہیں ہونا چاہئے۔اس بات پر چوہدری برجیس طاہر نے بھی لبیک کہا۔اجلاس میں وفاقی وزیر چوہدری برجیس طاہر،ایم این اے ڈاکٹر شذرہ منصب،ایم پی ایز ملک ڈوالقرنین ڈوگر،رانا جمیل کان گڈ خاں
سمیت شیخ علی رضوان،حافظ زاہد جاوید،ڈاکٹر عابد علی عابد،راو توقیر السلام،راو فہیم السلام ،سمیع اللہ عثمانی،عبدلحمید رحمانی،عابد رحمانی،امتیاز کاہلواں،عبدللہ مجاہد،میڈم روبینہ آصف کھرل،چوہدری آصف جاہ ایڈووکیٹ،رانا ایوب ایڈووکیٹ،سینئر صحافی افضال بٹ،بشیر مسیح،ابرار شاہ،رحمان شاہ،اوقاف کے نمائندے اسحاق صاحب اورمیڈم عائشہ حامداور دیگر نمائیندگان نے بھی شرکت کی۔کمیٹی کے کسی بھی اجلاس میں ایم این اے بلال ورک اور اس اجلاس میں ایم پی اے رانا ارشد نے شرکت نہ کی۔
کمیٹی کی اگلی میٹنگ ڈاکٹر شذرہ منصب کی چائنا روانگی کی وجہ سے 21 نومبر بروز منگل کو ننکانہ صاحب میں ڈی سی کانفرنس روم میں منعقد ہوگی
یاد رہے:اجلاس میں کچھ ایسی شخصیات بھی موجود تھی جن کو باقاعدہ کمیٹی میں شامل نہیں کیا گیااورنہ ہی ان کی شرکت کا NOC جاری کیا گیا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں