میٹر انسپکٹر محمد پرویز کی جگا گیری اور رشوت ستانی عروج پر

واپڈا سٹی سرکل پتوکی کے میٹر انسپکٹر محمد پرویز کی جگا گیری اور رشوت ستانی عروج پر ۔ریٹائرڈ آرمی ملازم حاجی ظفر اقبال کو ماہانہ منتھلی نہ دینے پر اس کے میٹر سے مزارع کے گھر جانے والی مین بجلی کی تار کاٹ کر لے گئے حاجی ظفر کو ڈیٹکیشن بل اور بجلی چوری کا مقدمہ کروانے کی دھمکیاں۔تفصیلات کے مطابق پاک فوج کے ریٹائرڈ حاجی ظفر اقبال سکنہ بھیڈیاں چک 35نے اپنی مالیتی زرعی زمین برلب موٹر وے سڑک پتوکی نزد ہلہ چوک گھر بنایا ہوا ہے اس کے ایک حصہ میں اس کا ملازم رہائش پذیر ہے اور وہ بھی حاجی ظفر کے گھر سے ہی بجلی استعمال کرتا ہے۔جولائی 2017ء کو میٹر انسپکٹر محمد پرویز حاجی ظفر کے پاس آیا اور اس سے کہا کہ تم مجھے ہر ماہ 5ہزار روپے بطور رشوت دو گے تو تمہارے مزارے کی سپلائی جاری رہے گی ورنہ کنکشن کاٹ دونگا۔حاجی ظفر اس کو کئی ماہ رشوت دیتا رہا ۔مورخہ22-12-2017کو محمد پرویز میٹر انسپکٹر رشوت لینے حاجی ظفر کے پاس آیا تو اس وقت اصغر ولد صدیق ، منور ولد اکبر کی موجودگی میں رشوت مانگی جس پر حاجی ظفر اقبا ل نے انکار کیا اور کہا کہ میں تجھے پہلے ہی تیس ہزار روپے دے چکا ہوں اب مزید نہ دونگا۔جس پر ملزم پرویز آگ بگولہ ہوگیا اور حاجی ظفر کو مقدمات میں پھنسانے ، بجلی چوری کا پرچہ کروانے اورتار کاٹنے کی دھمکی دی اور اگلے دن اس پر عمل کرتے ہوئے مالیتی تار بھی کاٹ کر لے گیا۔ظفر اقبال نے صحافیوں کو بتایا کہ پرویز اپنے آپ کو مقامی سیاستدانوں کا چہیتا گنواتا ہے اور ان کی ایماء پر شریف لوگوں کو تنگ کر کے ان سے لاکھوں روپے رشوت وصول کرتا ہے ۔ڈی جی ایف آئی اے کے نام تحریری درخواست میں حاجی ظفر اقبال نے واپڈا ملازم پرویز کے خلا ف مقدمہ درج کر کے اس کی رشوت کی مد میں لی گئی رقم واپس دینے کا مطالبہ کیا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں