Aleem Khan Resign From Company

عمران خان کووزیر اعلی پنجاب بنانے کے لئے بڑے چیلنج کا سامنا ہوگا

عمران خان کووزیر اعلی پنجاب بنانے کے لئے بڑے چیلنج کا سامنا ہوگا
پی ٹی آئی کی یقینی جیت کے بعد عوام نے آخر کار تھرڈ پارٹی پر یقین کر ہی لیا۔ اگر جذبہ سچا ہے، اور واقعی کرنا چاہتے ہیں تو دنیا میںکیا نہیں ہوسکتا۔ پی ٹی آئی کو حقیقت میں ڈلیور کرنا ہوگا ورنہ عوام اسے بھی روایتی اور کرپٹ پارٹی تصور کر لیں گے۔ عوام یہ بھی جانتے ہیں کہ پی ٹی آئی نے کے پی کے میں پانچ سال ملے ،صوبہ دہشت گردوں سے بھرا ہوا تھا، پھر بھی بہت زیادہ مثالی نہیں لیکن وہاں کا نظام پہلے سے کہیں زیادہ بہتر دکھائی دیتا ہے۔ اب عمران خان کو اپنے 100دن کے پلان پر بھی عمل کرنا ہے۔ آج ”پی ٹی آئی“‘ ملک کی سب سے بڑی سیاسی قوت ہے۔ کیوں کہ یہ ہماراآج ہے، آنے والا کل انشاءاللہ اس سے کہیں بہتر، برتر اور خوبصورت ہوگا۔لیکن اس سب سے پہلے اس وقت وزارت اعلی کے معاملے پر پی ٹی آئی اندرونی سازشوں کا شکار ہو چکی ہے علیم خان ، فواد چودہری ، محمود الرشید سمیت بہت سے امیدوار سامنے آ چکے ہیں اندرون خانہ شاہ محمود قریشی بھی سرگرم ہیں ۔صورتحال یہ ہے کہ پی ٹی آئی کو اگر پرفارم کرنا ہے تو انھیں ایسے شخص کا انتخاب کرنا ہو گا جو ڈلیور کر سکے اور ایسا شخص صرف علیم خان ہے جو پرفارم کر سکتا ہے۔محمود الرشید پر پہلے ہی الزام ہے کہ وہ میاں برادران کے زیر اثر رہے ہیں جبکہ فواد چودھری نے بھی وفاق میں جانے کی خواہش کااظہار کر دیا ہے۔

عمران خان کووزیر اعلی پنجاب بنانے کے لئے بڑے چیلنج کا سامنا ہوگا
پی ٹی آئی کی یقینی جیت کے بعد عوام نے آخر کار تھرڈ پارٹی پر یقین کر ہی لیا۔ اگر جذبہ سچا ہے، اور واقعی کرنا چاہتے ہیں تو دنیا میںکیا نہیں ہوسکتا۔ پی ٹی آئی کو حقیقت میں ڈلیور کرنا ہوگا ورنہ عوام اسے بھی روایتی اور کرپٹ پارٹی تصور کر لیں گے۔ عوام یہ بھی جانتے ہیں کہ پی ٹی آئی نے کے پی کے میں پانچ سال ملے ،صوبہ دہشت گردوں سے بھرا ہوا تھا، پھر بھی بہت زیادہ مثالی نہیں لیکن وہاں کا نظام پہلے سے کہیں زیادہ بہتر دکھائی دیتا ہے۔ اب عمران خان کو اپنے 100دن کے پلان پر بھی عمل کرنا ہے۔ آج ”پی ٹی آئی“‘ ملک کی سب سے بڑی سیاسی قوت ہے۔ کیوں کہ یہ ہماراآج ہے، آنے والا کل انشاءاللہ اس سے کہیں بہتر، برتر اور خوبصورت ہوگا۔لیکن اس سب سے پہلے اس وقت وزارت اعلی کے معاملے پر پی ٹی آئی اندرونی سازشوں کا شکار ہو چکی ہے علیم خان ، فواد چودہری ، محمود الرشید سمیت بہت سے امیدوار سامنے آ چکے ہیں اندرون خانہ شاہ محمود قریشی بھی سرگرم ہیں ۔صورتحال یہ ہے کہ پی ٹی آئی کو اگر پرفارم کرنا ہے تو انھیں ایسے شخص کا انتخاب کرنا ہو گا جو ڈلیور کر سکے اور ایسا شخص صرف علیم خان ہے جو پرفارم کر سکتا ہے۔محمود الرشید پر پہلے ہی الزام ہے کہ وہ میاں برادران کے زیر اثر رہے ہیں جبکہ فواد چودھری نے بھی وفاق میں جانے کی خواہش کااظہار کر دیا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں