Nawaz-sharif-rebellion Case

سابق وزیر اعظم میآں نواز شریف طلبی کے باوجود نیب لاہور مین پیش نہ ہوئے ۔

سابق وزیر اعظم میآں نواز شریف طلبی کے باوجود نیب لاہور مین پیش نہ ہوئے ۔نیب لاہور نے نوازشریف کو 20مئی کو طلب کر رکھا تھا نوازشریف نے بطور وزیراعظم 1998 میں اختیارات کا ناجائز استعمال کرتے ہوئے جاتی امرا تک سڑک تعمیر کروائی، نواز شریف کے حکم پر سڑک کی چوڑائی 20 فٹ سے 24 فٹ کی گئی جس سے لاگت بڑھی، نواز شریف پر بھائی کے ساتھ مل کر ذاتی فائدے کے لئے سڑک بنانے کا الزام ہے، ڈی جی نیب لاہور نے خصوصی ٹیم تشکیل دے رکھی ہے، خصوصی ٹیم میں دو ڈپٹی ڈائریکٹرز اور ایک اسسٹنٹ ڈائریکٹر شامل ہیں،

رائے ونڈ روڈ کی تعمیر میں ہونے والی کرپشن میں سابق وزیر اعظم نواز شریف اور وزیر اعلی پنجاب شہباز شریف کو نامزد کیا گیا ہے، نواز شریف کے حکم سے ضلع کونسل کے بہت سے عوامی منصوبے بند کرنے پڑے جس سے عوام کا نقصان ہوا ۔:17اپریل 2000ء میں شروع کی جانے والی تفتیش کے مطابق 12 کروڑ 56 لاکھ روپے سے زائد رقم کی کرپشن کی گئی،

2016 تک کرپشن انکوائری التوا کا شکار رہی، 2016کے بعد دوبارہ انکوائری پر کام شروع کیا گیا، ایک سکول اور ڈسپنسری کا بجٹ استعمال کرکے شریف برادران نے اپنی رہائش گاہ کیلئے سڑک تعمیر کروائی، چیئرمین نیب نے معاملے کی براہ راست انویسٹی گیشن کا حکم دیا تھا، تفتیش مکمل کرکے کرپشن ریفرنس احتساب عدالت لاہور میں دائر کیا جائے گا،

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں