CM balochistan initiative

وزیر اعلی بلوچستان کا محکمہ تعلیم کے کرپٹ بیوروکریٹس کے خلاف ایکشن لینے کا فیصلہ

وزیر اعلی بلوچستان کا ایک جراءتمندانہ اقدام محکمہ تعلیم کے کرپٹ وزیر طاہر مححمود اور سیکرٹری تعلیم۔اور محکمہ تعلیم کے کرپٹ بیوروکریسی کے خلاف ایکشن لینے کا فیصلہ وزیراعلی جناب محترم عبداقدوس بزنجو نے تعلیم یافتہ MAاورMScپاس اورNTSمتاثرین سے نوکری دینے کے عیوض پیسے لینے کے انکشاف کے باعد سخت ناراضی اور غم اور غصے کا اظہار کرتے ہوئے چیف سیکرٹری اور دیگر اعلی احکام کا رات گئے۔وزیر اعلی ہاوس میں اجلاس ہوا۔

اجلاس میں وزیراعلی نے اس بات کی سخت مزمت کی کہ ان کے کچھ وزیر اورمشیر اور بیوروکریٹ اسامیاں فروخت کررہیے ہیں۔جس میں سرفہرست محکمہ تعلیم۔اور صحت و دیگر محکمے بھی شامل ہیں۔کہ خلاف جلد از جل۔انکوائری کا حکم دیا ہیں۔اور عنقریب وزیر تعلیم اور سیکرٹری تعلیم کی برطرفی متوقوع ہیں۔کیونکہ عوام نے سب سے زیادہ شکایات محکمہ تعلیم کی کیے ہیں۔اور بظاہر ایسا محسوس ہورہا ہیں کہ وزیر اعلی کے ہاتھ وزیر تعلیم اور۔سیکرٹری تعلیم کے خلاف ٹھوس ثبوت لگے ہیں۔وزیر تعلیم کی NTSآسامیوں کی فروخت کرنے کا منصوبہ اس۔وقت سامنے آیا جب وہ آسا میوں سے متعلق متضادبیانات دیتے رہیے۔اور NTSکے کامیاب اعلی تعلیم یافتہ افراد کے آسامیوں کو ان بےروزگاروں کو دینے کے بجائےوہ خود ساختہ اور مینول طریقے سے پرائیویٹ ٹیکھداروں کے ذریعے اور طریقے سے پر کرنے کی سازشسیں تیار کررہیے تھے۔
سبی مسائل کی آماجگاہ حکمران خواب خرگوش میں
وزیر اعلی عبدالقدوس بزنجو جوکہ ایک نئی سیاسی جماعت اپنے رفقاء کے ساتھ بلوچستان میں بنارہیے ہیں اور وہ نہیں چاہتے کہ کوئی وزیر مشیر ان کی حکومت کی بدنامی کے باعث بنے۔اس لیئے فیصلہ کیا گیا ہیں ۔کہ کرپٹ وزیر مشیر کو فارغ کرکے محکمہ تعلیم کی وزارت سرفراز بگٹی کو دیکر اپنی نئی سیاسی جماعت کو عوامی مقبولیت دلانے کیلئے مقبولیتNTS پاس بے روزگاروں کو روزگار دیکر بلوچستان کے عوام کی ہمدردی اور حمایت حاصل کرنے کی کوشش کرینگے۔اگر ایسا ہوجاتا ہیں۔تو وزیر اعلی کی نئی سیاسی جماعت کو بلوچستان بھر سے ہزاروں تعلیم یافتہ افراد کی نہ صرف حمایت حاصل ہوگی بلکہ ہزاروں غریب خاندان اس جماعت میں شمولیت اختیار

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں