CM complain Sell Case

رہائشی علاقے میں سی آئی اے سنٹر کی تعمیر کے کیس میں بڑے بڑوں کی طلبی

لاہور ہائیکورٹ نے رہائشی علاقے میں سی آئی اے سنٹر کی تعمیر کیخلاف دائر درخواست پر حکومت پنجاب،آئی جی پنجاب اور دیگر فریقین سے جواب طلب کر لیا۔

لاہور ہائیکورٹ کے جسٹس مظاہر علی اکبر نقوی نے کیس کی سماعت کی،مقامی رہائشیوں کے وکیل اظہر صدیق ایڈووکیٹ نے موقف اختیار کیا کہ پرانی انارکلی کے ربانی روڈ پر سی آئی اے سنٹر کو غیر قانونی طور پرتعمیر کیاجا رہی ہے،

سی آئی اے سنٹر کی تعمیر سے مقامی رہائشیوں کی زندگیاں خطرے میں ہیں، رہائشی علاقوں میں قانون نافذ کرنیوالے اداروں پر پہلے بھی دہشتگردی کے حملے ہو چکے ہیں، سی آئی اے سنٹر پر حملہ ہوا تو ملحقہ علاقوں کے رہائشی متاثر ہونگے ،
رائیونڈ میں خود کش دھماکہ کے بعد فضاء سوگوار
علاقے میں آئی جی پنجاب آفس کی وجہ سے سے پہلے ہی رہائشی مشکلات کا شکار ہیں،آئی جی آفس کے اردگرد رکاوٹوں کے باعث اور سکیورٹی خدشات کی وجہ سے شہری پہلے ہی خوفزدہ رہتے ہیں،،انہوں نے استدعا کی کہ عدالت شہریوں کے جان و مال اور بنیادی حقوق کے تحفظ کو یقینی بنانے کے لئے سی آئی اے سنٹر کی تعمیر روکنے کے احکامات صادر کرے،،جس پر عدالت نے حکومت پنجاب،آئی جی پنجاب اور دیگر فریقین کو نوٹس جاری کرتے ہوئے جواب طلب کر لیا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں