Chichawatini children died By injection

شاہد رسول کلینک میں ڈسپنسر کے غلط انجکشن لگانے کی وجہ سے 15 ماہ کا بچہ جانبحق

چیچہ وطنی کے ایک نجی ہسپتال شاہد رسول کلینک میں ڈسپنسر کے غلط انجکشن لگانے کی وجہ سے 15 ماہ کا بچہ جانبحق۔
کلینک کا مالک تحصیل ہیڈ کوارٹر ہسپتال چیچہ وطنی کا موجودہ ایم یس ڈاکٹر شاہد رسول ہے

چیچہ وطنی گرین لینڈ ہوٹل کے قریب نجی ہسپتال شاہد کلینک میں ایک 15 ماہ کا بچہ عبداللہ، ڈسپنسر کے غلط انجکشن لگانے سے جانبحق ہو گیا۔
معصوم عبداللہ کو ہلکا بخار اور پیچس لگے ہوئے تھے۔
آج اس کو کلینک پر معمول کے مطابق چیک اپ کے لیئےلایا گیا ڈسپنسر نے بغیر چیک اپ کیئے انجکشن لگا دیا جس سے معصوم عبداللہ کی طبعیعت بگڑ گئی اور تھوڑی دیر بعد فوت ہو گیا۔ جس کے بعد شاہد رسول جو کہ ایم ایس ہے موقع پر آگیا اور بچے کے ورثا سے کہا کہ اس کو فوری طور پر تحصیل ہیڈ کوارٹر ہسپتال لے جاو اس کو آکسیجن لگواو۔
ورثا کے مطابق ہمارا بچہ ہسپتال پہنچنے سے پہلے ہی فوت ہو گیا تھا۔
جبکہ اس حوالے سے ایم ایس کا کہنا ہے کہ جب یہ واقعہ پیش آیا اس وقت میں اپنے پرائیویٹ ہسپتال میں موجود نہ تھا بلکہ تحصیل ہیڈ کوارٹر ہسپتال میں اپنی ڈیوٹی سر انجام دے رہا تھا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں