Balochistan-development and Rebels

بلوچستان میں چیک اینڈ بیلنس سے ماورا نظام ؟

سیف سٹی پروجیکٹ کوئٹہ جس کا منصوبہ گزشتہ چار سال سے کاغذوں میں شروع کیا گیا ہے جس کی لاگت 3 ارب روپے ہیں لیکن اس پروجیکٹ کے تحت پورے شہر میں ایک بھی کیمرے کی تنصیب نہیں ہوئی ہے اور حد تو یہ ہے کہ کوئٹہ سیف سٹی پروجیکٹ کے بجٹ کو مال مفت سمجھ
پنجاب بھر کے سکولوں کے خواندگی اور حسابی نظام کی عوام تک رسائی آج سے شروع
آئی ٹی ڈپارٹمنٹ بلوچستان اشرافیہ اپنی زندگیاں سیف کرلی ہے اس پروجیکٹ کیلئے مختص بجٹ سے غیر قانونی طور پر 23 کروڑ روپے کی گاڑیاں، فرنیچر، ٹشو پیپرز، اور پیٹرول خرید لئے ہیں

اور ساتھ فائل پر بڑے الفاظ میں لکھا ہے کہ ایک دفعہ نائی کے پاس بچین میں گئے تھے دوسری جس میں ہمت ہے وہ سامنے آئے

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں