2018 تک لوڈشیڈنگ ختم ہو جائے گی.عابد شیر علی

فیصل آباد: وزیر مملکت برائے پانی و بجلی عابدشیر علی کا کہنا ہے کہ نوازشریف پرالزامات لگانے والے عمران خان اب خود سپریم کورٹ میں تلاشی دے رہے ہیں،۔
فیصل آباد میں میڈیا سے بات کرتے ہوئے عابد شیرعلی کا کہنا تھا کہ وفاقی حکومت وزیراعظم کے وعدے کے مطابق کام کر رہی ہے, 4 سالہ دور اقتدار میں اب تک توانائی کے متعدد منصوبے لگائے اور ہم نے سسٹم کو 13 ہزار میگا واٹ بجلی فراہم کی جب کہ مزید بہترین نتائج آئندہ برس بھی سامنےآئیں گے، اس وقت پنجاب کے بیشتر دیہی علاقوں میں صرف 8 گھنٹے لوڈشیڈنگ ہورہی ہے جس کا ماضی میں دورانیہ 20 گھنٹے تک رہا ہے اب لوڈشیڈنگ میں بتدریج کمی ہورہی ہے.
وزیرمملکت نے کہا کہ ہم نے ہائی ٹرانمیشن پر سرمایہ کاری کی ہے اور اسی ماہ 11 سے 12 سو میگا واٹ بجلی سسٹم میں داخل ہوجائے گی جبکہ مارچ 2018 تک نیشنل گرڈ میں 7 سے 8 ہزار میگاواٹ بجلی شامل ہونے سے ملک بھر سے لوڈشیڈنگ کا مکمل خاتمہ ہوجائے گا تاہم جن علاقوں میں لائن لاسز اور بجلی کے بل واجب الادا ہیں وہاں بدستور لوڈشیڈنگ جاری رہے گی، خیبر پختونخوا اور سندھ کے کچھ علاقوں میں لائن لاسز بہت زیادہ ہیں۔ رمضان سے پہلے سسٹم کا جائزہ لے رہے ہیں، زیادہ ترعلاقوں میں کوشش کریں گے کہ سحر، افطار اورتراویح میں لوڈشیڈنگ نہ ہو لیکن لائن لاسز والے علاقوں میں رمضان کے دوران بھی لوڈشیڈنگ کے مسائل آئیں گے۔
عابد شیرعلی کا کہنا تھا کہ نوازشریف پرالزامات لگانے والے عمران خان اب خود سپریم کورٹ میں تلاشی دے رہے ہیں، ہم نے تو اپنی تین نسلوں کی تلاشی دی ہے اب ان کا بھی فرض بنتا ہے کہ وہ بھی تلاشی دیں۔ پرویزالہٰی بھی اسپین اور فرانس میں اپنی بے نامی جائیداد کا حساب دیں اور وضاحت پیش کریں۔ ان کا کہنا تھا کہ سندھ اور کے پی میں جو ڈاکو راج ہے اس سے عوام کو چھٹکارہ دلائیں گے اور 2018 میں چاروں صوبوں میں مسلم لیگ (ن) کی حکومت ہوگی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں