’کے الیکٹرک کو بجلی تقسیم کرنے کا لائسنس دیا ہے، بندے مارنے کا نہیں‘

وفاقی وزیر برائے بجلی و پیٹرولیم ڈویژن عمر ایوب کا کہنا ہے کہ چیئرمین نیپرا نے کے الیکٹرک کو بتادیا ہے کہ انہیں بجلی تقسیم کرنے کا لائسنس دیا ہوا ہے،  بندے مارنے کا نہیں۔

عمر ایوب کا کہنا تھا کہ کراچی میں کرنٹ لگنے سے ہونے والی اموات پر نیپرا کی تحقیقات ابھی جاری ہیں جس کی رپورٹ قائمہ کمیٹی اور پارلیمنٹ میں بھی پیش کریں گے۔

انہوں نے کہا کہ ملک میں بجلی پیدوار ترسیل اور تقسیم کے شعبوں میں 80 ارب ڈالر کی سرمایہ کاری کے مواقع موجود ہیں، نئی قابل تجدید توانائی پالیسی کا مسودہ وزیر اعظم کو بھیج دیا گیا ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ حکومت کیلئے سب سے بڑا چیلنج درآمدات میں کمی لانا ہے، اگر غیر دستاویزی شعبے کو بھی شامل کر لیا جائے تو پاکستان کی معیشت کا حجم 600 ارب ڈالر ہے

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں