کیا آپ خون میں کولیسٹرول کم کرنے کی دوا لے رہے ہیں ؟

خون میں کولیسٹرول کم کرنے کی دوا جو سٹیٹن گروپ سے تعلق رکھتی ہے ۸۰ کی دھائی کے وسط میں متعارف ھوئی ۔ دل کی نالیوں کی تنگی کی وجہ سے پیدا ھونےوالی بیماریوں ، انجائنا اور ھارٹ اٹیک سے بچاؤ کے حوالے سے اس دوائی نے طبی شعبے میں بہت مقبولیت حاصل کی ۔ آج بھی دل کے ھسپتالوں میں دل کے دورے سے بچاؤ اور انجائنا ، ھارٹ اٹیک کے علاج کے لیئے لکھے جانے والے بیشتر نسخوں میں یہ دوائی لازمی شامل ھوتی ہے ۔
وہ مریض جو خون میں کولیسٹرول کم کرنے کی دوا استعمال کر رہے ہیں ان کے لیئے مندرجہ ذیل ھدایات لازمی ہیں !
جگر اور پٹھوں کے خون کے ٹیسٹ وقتا فوقتا کرواتے رہیں ۔
کوئی بھی دوا مستند ڈاکٹر کے مشورے کے بغیر کبھی استعمال نہ کریں کیونکہ بعض دوائیں کولیسٹرول کم کرنیوالی دوا کا اثر زائل کر سکتی ہیں یا اس دوا کی مقدار خون میں زیادہ کرکے جگر اور پٹھوں کو شدید نقصان پہنچا سکتی ہے.
کولیسٹرول کم کرنے کی دوا کے استعمال کے دوران گریپ فروٹ کا جوس کبھی استعمال نہ کریں ۔
یاد رکھیئے ! دوائیں اسی وقت فائدہ پہنچاتی ہیں جب ان کا استعمال مستند ڈاکٹرز کے تجویز کردہ نسخے کے مطابق کیا جائے ۔ خود سے یا دوائی کی دکان پر کام کرنے والے اسٹاف یا دل کے دوسرے مریضوں کے مشورے سے نسخے میں کبھی تبدیلی نہ کریں ۔
اگر اس دوا کے استعمال کے بعد کندھوں یا کولہے کے پٹھوں میں شدید درد یا کمزوری یا پورے جسم میں درد محسوس ھوتا ہے تو اپنے ڈاکٹر سے فورآ رابطہ کریں ۔

ڈاکٹر سید جاوید سبزواری ۔

کیٹاگری میں : صحت

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں