کلبھوشن یادیو کے معاملے پر وزیرآعظم نے پارلیمنٹ کو اعتماد میں نہیں لیا.قائد حزب اختلاف خورشید شاہ


اسلام آباد: قائد حزب اختلاف سید خورشید شاہ نے کہا ہے کہ کلبھوشن یادیو پر وزیر اعظم نے پارلیمنٹ کو اعتماد میں نہیں لیا، آرمی ایکٹ کے تحت جاسوسوں کو ایسی ہی سزائیں ملتی ہیں، جو کلبھوشن کو ملی، حکومت کو دنیا کو بتانا چاہیے پاکستان نے جو کام کیا وہ قانونی و آئینی طور پر کیا۔ چیئرمین پی اے سی و اپوزیشن لیڈر خورشید شاہ نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ شیڈول کے مطابق پی اے سی اجلاس بلاتے ہیں اور آج بھی اجلاس تھا، آڈیٹر جنرل پاکستان کی ابھی تک تعیناتی نہیں ہوئی۔ آئینی پوزیشن ہے خالی نہیں ہونی چاہیئے۔ فوری تقرر ہونا چاہیئے تھا۔ یہ بھی معلوم کیا کہ کیا صدر نے عارضی طور پر کسی کی تعیناتی تو نہیں کی، مگر معلوم ہوا ایسا بھی نہیں کیا گیا۔ آج آڈیٹر جنرل کے بغیر اجلاس ہوتا تو اس کی قانونی حیثیت کو چیلنج کیا جا سکتا تھا۔ انہوں نے کہا کہ آج پاکستان میں بہت بڑی بڑی پوزیشنز خالی رہتی ہیں، مسئلہ یہ ہے کہ یہ ڈھونڈتے رہتے ہیں کہ ہمارا وفادار کون ہے، وفادار کی تلاش میں اہم تعیناتیاں لٹکا دیتے ہیں،

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں