کلبھوشن کیس عالمی عدالت انصاف بھارت کی زبان بولنے لگی

عالمی عدالت انصاف نے کلبھوشن یادیو کیس پر حکم امتناعی جاری کر دیا.
عالمی عدالت انصاف کے جج رونی ابراہم نے کہا کہ قونصلر رسائی کے معاملہ پر دونوں فریقین کی جانب سے اختلاف پایا جاتا ہے اور ویانا کنونشن میں جاسوسی سے متعلق قیدیوں کا معاملہ علیدہ نہیں ہے.
اور کلبھوشن یادیو کا معاملہ علامی عدالت انصاف کے دائرہ میں ہے پاکستان نے کلبھوشن کی پھانسی کی کوئی حتمی تاریخ نہیں دی.اور عالمی عدالت انصاف کا فیصلہ آنے سے پہلے پاکستان کلبھوشن کو سزا نہیں دے سکتا.
ویانا کنونشن کے تحت جاسوسوں تک رسائی نہیں دی جا سکتی.
اس کے علاوہ کلبھوشن یادیو کو اپیل کے لیے چالیس دن دیے گئے تھے لیکن کلبھوشن نے اس دوران کوئی اپیل نہیں کی.

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں