کرکٹ پر بھارتی اجارہ داری ختم،بگ تھری کی جگہ نئےمالیاتی ماڈل کی منظوری

بین الاقوامی کرکٹ کونسل (آئی سی سی) کے فُل ممبران نے ’بگ تھری‘ اور انڈیا کے خلاف ووٹ دے کر نئے مالیاتی ماڈل اور آئنی ترامیم متعارف کرانے کی منظوری دے دی ہے۔
بدھ کو دبئی میں آئی سی سی کے اجلاس میں آئی سی سی کے نئے آئین کے حق میں آٹھ ممالک نے ووٹ دیا ہے جبکہ انڈیا اور سری لنکا نے اس کی مخالفت کی ہے۔ اسی طرح آئی سی سی کے نئے مالیاتی نظام کے حق میں بھی ٹیسٹ کرکٹ کھیلنے والے نو ممالک نے ووٹ دیا ہے تاہم انڈیا نے اسے قبول کرنے سے انکار کردیا ہے۔

اگرچہ بین الاقوامی کرکٹ کونسل کے نئے آئین کو اکثریت کی حمایت حاصل ہے تاہم اس کی باضابطہ منظوری جون 2017 میں ائی سی سی کے سالانہ اجلاس میں دی جائے گی.
پی سی بی کے چئیر مین شہریارخان کا اس موقع پر کہنا تھا کہ ’بگ تھری‘ کا خاتمہ آئی سی سی اور کرکٹ کی دنیا کے لیے اہم قدم ہے ان کا مزید کہنا تھا کہ ٹیسٹ کرکٹ کھیلنے والے ممالک کی اکثریت کو احساس ہوگیا تھا کہ ایسے نہیں ہونا چاہیے اور اسی وجہ سے ان ممالک نے اس کے خاتمے کے لیے ووٹ دیا.

پی سی بی چئیر مین شہریارخان یہ بھی کہا کہ ‘سب کو اس بات کا بخوبی اندازہ ہوگیا ہے کہ بگ تھری کرکٹ کے لیے صحیح نہیں یہی وجہ ہے کہ آسٹریلیا اور انگلینڈ نے بھی جو بگ تھری میں شامل تھے اب اس کے خلاف ووٹ دیا ہے۔’
شہریارخان نے کہا کہ پاکستان کرکٹ بورڈ نے بگ تھری کے خاتمے کے سلسلے میں اصولی موقف اختیار کررکھا تھا کہ اس سے کرکٹ صحیح سمت میں نہیں جاسکتی.

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں