پاک بھارت مزکراتی عمل جاری رہتا تو کلبھوشن کی زندگی بچ سکتی تھی.مانی شنکر


کانگریس کے رہنما مانی شنکر کا کہنا ہےکہ پاک بھارت مذاکرات کاعمل جاری رہتا تو کلبھوشن یادیو کی جان بچ سکتی تھی.

بھارت کی اپوزیشن جماعت کانگریس کے رہنما مانی شنکر آیئر نےوزیر اعظم نریندرمودی کو یہ مشورہ بھی دیا ہے کہ اگر بھارت کےپاس بھی کوئی کلبھوشن جیسا پاکستانی قیدی ہوتو ڈیل کی جاسکتی ہے۔

انہوں نے کہا کہ بھارت کوچاہیے کہ پاکستان کوآگاہ کرے کہ نئی دلی مذاکرات کاعمل بحال کرناچاہتاہے۔ اگر مذاکرات کاعمل جاری رہتاتوممکنہ طورپر جادیوکو سزا سنائے جانےجیسا واقعہ ہوتاہی نہیں۔

سابق سفارتکار کاکہنا تھا کہ جادیوکے لیے عاصمہ جہانگیر اور اعتزازاحسن جیسےوکلاکی خدمات حاصل کی جانی چاہئیں

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں