پاکستان کے مفاد کے لیے ہم سب کو ایک ہونا پڑے گا: مصطفیٰ کمال

نیوزویوز:(مٹھی) مصطفی کمال کا جلسے سےخطاب کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کے ووٹ مانگنے نہیں آیا ہوں اور نہ اس لئے زہمت دی ہے کہ میرے کسی اپنے کو مدد چاہئے , میں کراچی سے چلا ہوں ایک اردو بولنے والا آپ سے بات کرنے آیا ہوں کہ تیس سالوں سے لڑا دیا گیا تھا دشمنی پیدا کردی گئی تھی , میں ایسا سندھ چاہتا ہوں.جہاں ہم ایک محلے میں رہیں اسی ٹیبل پر بیٹھیں اور الگ الگ سیاسی جماعتوں کو ووٹ دیں پھر ساتھ بیٹھ جائیں اس کو دشمنی میں نہ بدلیں.ہم نے ساتھ رہ کر جینے کا سلیکا سیکھنا ہے اور ایک ہوکر نفرت کو ختم کرنا ہے ووٹ لینے کے لئے دشمنی پیدا کرنے والا تمہارا دوست نہیں ہے وہ تمہاری نسلوں سے کھیل رہا ہے ,یہ ہی وجہ ہے کہ آج پورے پاکستان میں ساڑھے تین لاکھ بچے بھوک اور پانی کی.کمی سے مر جاتے ہیں کوئی پوچھنے والا نہیں ہے مائیں خاموشی سے دفن کردیتی ہیں , ستر لاکھ بچے اسکول نہیں جارہے یہ.جب بڑے ہونگے روزگار نہیں ہوگا تو وہ گلے کاٹیں گے اور موبائل.چھینین گے , ان ہی بچوں میں کچھ کو لالچ دے کر جنت کے خواب دیکھا کر ملک کے خلاف استعمال کریں گے میں مستقبل میں بھیانک صورتحال دیکھ رہا ہوں.

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں