پاناما کیس کا فیصلہ الٹی گنتی شروع ،ایک طرف جنون ہے ہوش میں دوسری جانب ن ہے جوش میں

پاناما کیس کا فیصلہ آج 19اپریل دوپہر 2 بجے سنا یا جائے گا لیکن پی ٹی آئی اور ن لیگ کے کارکنان ابھی سے جشن منانے کے لئیے پرجوش دیکھائی دیتے ہیں.
ڈیفنس لالک چوک میں جہاں ن لیگ اور تحریک انصاف کے کارکنان ڈیرے ڈالے بیٹھے ہیں تو دوسری جانب سوشل میڈیا پر بھی دلچسب کمنٹس ،سٹیٹس اور مباحثے ماحول کو گرما رہے ہیں.
جہاں دونوں پارٹیوں کے کارکنان جیت کا جشن منانے کے لیے پرعزم دیکھائی دیتے ہیں وہیں دونوں پارٹیوں کے سربراہان نے بھی کسی بھی فیصلے کی صورت سے نمٹنے کے لیے آج اپنی اپنی پارٹی کی کور کمیٹیوں کی آجلاس بھی منعقد کیے ہیں
ن لیگ کی کور کمیٹی کا اجلاس میاں نواز شریف کی صدارت میں ہوا
میاں نواز شریف نے بھکی پاور پلانٹ کا افتتاح کرتے ہوے بھی مخالفین پر تنقید کی. دوسری جانب تحریک انصاف کی کور کمیٹی کا اجلاس چیئرمین تحریک انصاف عمران خان کی قیادت میں بنی گالا میں منعقد ہوا.
بڑے مقدمے کا بڑا فیصلہ آج 2بجے دوپہر سنایا جائے گا، 35سماعتوں میں 25ہزار دستاویزات پیش کی گئیں۔
شریف خاندان اور درخواست گزاروں کی قانونی جنگ کا کیا نتیجہ نکلے گا؟ فیصلہ کس کے حق میں آئے گا، کس کے خلاف ہوگا، پورے ملک کی نظریں سپریم کورٹ پر لگ گئیں۔

پاناما لیکس میں آف شور کمپنیوں کے انکشاف پرعمران خان، شیخ رشید اور سراج الحق نے نواز شریف، اسحاق ڈار اور کیپٹن صفدر کی نا اہلی کی درخواستیں دائر کررکھی ہیں۔

سپریم کورٹ نے کاز لسٹ جاری کر دی ہے.
میاں نواز شریف اور عمران خان دونوں نے اپنے اپنے کارکنان کو سپریم کورٹ جانے سے روک دیا ہے.
دوسری جانب سپریم کورٹ کی سیکورٹی انتہائی سخت کردی گئی ہے .
سپریم کورٹ کے اطراف میں بیرئر لگا کر تمام داخلی راستے بند کر دیے گئے ہیں ریڈ زون میں مخصوص پاس رکھنے والے افراد ہی جا سکتے ہیں
ریڈ زون کے اطراف میں پولیس،رینجرز اور دیگر سیکورٹی فورسز کے 1000 اہلکار تعینات ہونگے.

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں