پاناما کیس میں سابق ڈائریکٹر ایف آئی اے کے سنسنی خیز انکشافات

سابق ڈائریکٹر ایف آئی اے نے پاناما کیس کے حوالے سے تہلکہ خیز انکشافات کیے ہیں.
سابق ڈائریکٹر انعام الرحمن سحری کا کہنا ہے کہ اگر جے آئی ٹی میری حفاظت کو یقینی بنائیں تو شریف فیملی کے خلاف کرپشن کے تمام کیسز میں ثبوت فراہم کرنے کے لیے تیار ہوں.کرپشن کے خلاف ہر انتہائی قدم اٹھا سکتا ہوں.
انعام الرحمن کا کہنا تھا کہ لاہور اسلام آباد موٹروے میں 8 بلین کرپشن،حدیبیہ انجنئیرنگ،حدیبیہ پیپر ملز کے ثبوتوں سمیت شریف فیملی کے تمام.بینک اکاونٹس کی تفصیلات جو سلمان ضیاء اور قاضی فیملی کے نام پر استعمال ہوئے مہیا کر سکتا ہو کر پشن کے خلاف اپنی گواہی سے منحرف نہیں ہونگا.
حدیبیہ کیس کے حوالے سے تحقیقات کرنے کی وجہ سے 1997 میں واضح رہےنواز شریف گورنمنٹ نے انعام الرحمن سحری کو نوکری سے برطرف کر دیا تھا جس کے بعد سے وہ اپنی فیملی کے ساتھ لندن میں مقیم ہیں.
انعام الرحمن 1997 میں ایف آئی اے کے اکنامک کرائم ڈیپارٹمنٹ میں ڈپٹی ڈائریکٹر کے عہدے پر فائز تھے.

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں