ٹی ٹی پی ترجمان احسان اللہ احسان کا اعترافی بیان جاری

کالعدم تحریک طالبان پاکستان کے ترجمان احسان اللہ احسان کا اعترافی بیان ائی ایس پی آر کی جانب سے جاری کردیا گیا۔

اعترافی بیان میں احسان اللہ احسان نے بتایا کہ اس نے 2008 میں کالعدم ٹی ٹی پی میں شمولیت اختیار کی ، ٹی ٹی پی نے اسلام کے نام پر لوگوں کو گمراہ کیا، 2008 میں کالج کا طالب علم تھا، ان 9 برسوں میں ٹی ٹی پی میں بہت سی چیزوں کو دیکھا ،ٹی ٹی پی نے اسلام کے نام پر خصوصاً نوجوان طبقے کو گمراہ کرکے اپنے ساتھ ملایا۔

احسان اللہ احسان کا کہنا تھا کہ جو نعرے یہ لوگ لگاتے تھے ان پر خود پورا نہیں اترتے تھے، امراء بنا بیٹھا مخصوص ٹولہ لوگوں سے بھتے لیتا ہے، یہ لوگوں کاقتل عام کرتےہیں،پبلک مقامات پردھماکے کرتے ہیں، اسکولوں، کالجوں اور یونیورسٹیوں پر حملے کرتے ہیں۔

احسان اللہ احسان نے اعترافی بیان میں کہا کہ اسلام ہمیں حملوں کا درس نہیں دیتا ، قبائلی علاقوں میں آپریشن شروع ہوئے تو قیادت کی دوڑ تیز ہوگئی، ہربندہ چاہتا تھا کہ وہ تنظیم کا امیر بنے ، شمالی وزیرستان میں آپریشن شروع ہونے پر ہم افغانستان چلے گئے جہاں ساتھیوں کے بھارت اور راسے تعلقات تھے، ان کو معلومات فراہم کیں اور اہداف دیئے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں