وزیر اعظم کے اثاثے مخفی ہوتے ہیں نہ ان کا احتساب. رضا ربانی

چیرمین سینیٹ رضا ربانی نے آبزرویشن دی ہے کہ عدلیہ، فوج ،سیاستدانوں اور اراکین پارلیمنٹ کے بلاتفریق احتساب کا ایک یکساں اور جامع قانون ہونا چاہیے۔
چیرمین سینیٹ نے اجلاس کے دوران پاک فضائیہ کے ایکٹ میں ترمیمی بل پیش ہونے کے موقع پر آبزرویشن دیتے ہوئے کہا کہ اب تو یہ آئین کے آرٹیکل 243 کو تسلیم بھی نہیں کرتے، ہر ادارہ اگر احتساب کا الگ الگ قانون لائے گا تو سسٹم کیسے چلے گا، پہلے بھی رائے دے چکا ہوں کہ سب اداروں کا بلاتفریق و بلاامتیاز احتساب کا یکساں طریقہ کار ہونا چاہیے، بشمول فوج، عدلیہ و پارلیمنٹ کے احتساب کے لیے جامع قانون وضع کیا جائے۔
وزیراعظم نے کہا کہ الگ الگ احتساب کا قانون ہوگا تو کیا ہم بھی سینٹ کو ٹرائل کورٹ میں تبدیل کردیں،پوری دنیا میں وزیراعظم کے اثاثے مخفی ہوتے ہیں نہ ان کا احتساب، تو کسی ادارے کے احتساب کی کارروائی کیوں مخفی رکھی جاتی ہے، وزیراعظم کی مراعات دیگر سہولیات کو کوئی خفیہ نہیں رکھا جاتا یہاں ایک ادارے کی طرف سے اپنے سبکدوش اعلیٰ افسران کی مراعات تنخواہوں اور الاونسز کو چھپایا جارہا ہے، عرصے سے بار بار سوالات کیے جارہے ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں