ورچوئل یونیورسٹی نے ہائر ایجوکیشن کمیشن کےاین ۔او۔ سی کےبغیر ہی ایم فل، ایم ایس اور پی ایچ ڈی پروگرامز میں اندراج کرکے4500 طلبا کا مستقبل داؤ پر لگا دیا۔

اسلام آباد (سٹاف رپورٹر)؛ورچوئل یونیورسٹی (VU) پاکستان نے ہائر ایجوکیشن کمیشن (ایچ ۔ای ۔سی) کی جانب سے این۔او۔ سی (نو آبجیکشن سرٹیفکیٹ) حاصل کئے بغیر ہی ایم فل، ایم ایس اور پی ایچ ڈی پروگرامز میں 4،500 طالب علموں کو داخلہ دے دیا۔.
تفصیلات کے مطابق ورچوئل یونیورسٹیVU نے حال ہی میں پی ایچ ڈی کمپیوٹر سائنس، ایم فل ایجوکیشن،ایم فل بایو انفارمیٹکس، ایم فل بایو ٹکنالوجی،ایم فل زولوجی،ایم فل ریاضی اور ایم فل مولیکیورلر بایولوجی میں داخلےدئے ہیں۔
ایچ ۔ای ۔سی کی پالیسی کے مطابق،نئے ایم ایس، ایم فل اور پی ایچ ڈی پروگرامز شروع کرنے کے لئے این۔ او۔سی کا ہونا ضروری ہے ۔این۔ او۔ سی کے بعد ہی طلباء کا اندراج شروع کیا جا سکتا ہے۔ مگر ایچ۔ ای ۔سی کے قوانین کی خلاف ورزی کرتے ہوئے،ورچوئل یونیورسٹی VU نے پہلے سے ہی ان پروگراموں میں 4500طالب علموں کا اندراج کرلیا ہے ۔
ایچ ۔ای۔ سی کی پالیسی میں یہ واضح ہے کہ بغیر این ۔او۔ سی کے شروع ہونے والے پروگرامز کو کمیشن تسلیم نہیں کرے گا اور ان پروگرامز کی انسٹیٹیوٹ کی طرف سے نوازی گئی ڈگری کی تصدیق بھی نہیں کی جائی گی ۔

ایچ ای سی کی ترجمان عائشہ اکرام نے کہا کے ورچوئل یونیورسٹی (VU) نے چند ماہ قبل اپنے نئے پروگرام کے لئے این او سی کی درخواست کی تھی. انہوں نے اس بات کی تصدیق بھی کی کے ایچ ای سی کی طرف سے VU ورچوئل یونیورسٹی کو این او سی ملنا ابھی باقی ہے ۔

ورچوئل یونیورسٹیVU کے ترجمان قمر ریاض نے کہا کے یونیورسٹی اپنے مینڈیٹ کے مطابق تمام ایم ایس اور پی ایچ ڈی پروگراموں کی پیشکش کر رہی ہے۔ یونیورسٹی نے ایچ ای سی کو این او سی کے لئے درخواست دے رکھی ہے ۔کسی بھی distance learning یونیورسٹی کو ڈگری پروگرام کے لئے این او سی سے نہیں نوازا گیا .ایچ ای سی کی ویب سائٹ پر دستیاب فہرست میں علامہ اقبال اوپن یونیورسٹی کے پروگرامز کو ظاہر کیا گیا جبکہ (علامہ اقبال اوپن یونیورسٹی) بھی ایک distance learning ادارہ ہے ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں