نہ ڈیم بنے نہ ہسپتال توملکی قرضہ 14800ارب روپے کیسے بڑھ گیا:صدر ممنون حسین

نیوز ویوز (بنوں): مسلم لیگ نواز کی حکومت کی پہلے ہی سیاسی مشکلات کیا کم تھیں کہ کل صدر ممنون حسین نے بنوں یونیورسٹی میں خطاب کے دوران موجودہ حکومت کی کارکردگی پر سوال اٹھا دئیے. عمومہ معاملات میں خاموش مگر صرف اہم معاملات پر بولنے والے صدر پاکستان ممنون حسین نے بنو ں یونیورسٹی میں خطاب کے دوران کئی اہم سوالات اٹھا کر گویا عوام کی زبان بن گئے.
انہوں نے ایک ایسا سوال پوچھا جسے سن کر سبھی دم بخود رہ گئے. انہوں نے پوچھا کہ ملک بھر میں نہ تو ڈیم بنے نہ ہسپتال تو 2013 سے اب تک مسلم لیگ نواز کی حکومت کے دوران ملکی قرضہ 14800 ارب روپے کیسے بڑھ گیا. ان کا کہنا تھا کہ یہ تمام قرضہ تو ڈیموں ، روزگار اور تعلیم کی بنیاد پر لیا گیا تھا مگر یہ تینوں مسائل جوں کے توں موجود ہیں.
ان تمام مسائل کی وجہ انہوں نے کرپشن کو بتا کر عوام کو مزید پریشان کر دیا کیونکہ صدر پاکستان ممنون حسین کا انتخاب مسلم لیگ نواز ہی کے مرہونَ منت ہے اور وہ بھی مسلم لیگ نواز کی کارکردگی سے نالاں نظر آ رہے ہیں.

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں