میں وزیراعظم ہوتا تو استعفی دے دیتا جے آئی ٹی کے سامنے پیش نہ ہوتا.خورشید شاہ

اپوزیشن لیڈر خورشید شاہ کا کہنا ہے کہ میں وزیراعظم ہوتا تو جے آئی ٹی کے سامے پیش نہ ہوتا بلکہ استعفی دے دیتا.
ہمارے دور میں پیپلزپارٹی کے منتخب وزیراعظم دو دو بار عدالت گئے. انہوں نے کہا کہ وزیراعظم کہ پاس اپنی سچائی ثابت کرنے کے لیے کچھ نہیں ہے.اگر آپ سچے تھے تو قومی اسمبلی میں وضاحتیں پیش کیوں کرتے رہے. وزیراعظم بطور ملزم پیش ہو تو پیچھے کچھ نہیں رہتا.
اپوزیشن لیڈر کا مزید کہنا تھا کہ نوازشریف شریف بھولے آدمی ہیں آئینہ دیکھانے پر خوفزدہ ہو جاتے ہیں .لیکن کبھی کبھی دوسروں کو بھولا بنا دیتے ہیں.
نوازشریف اچھی طرح کٹھ پتلیوں کے کھیل کو جانتے ہیں عوام کو سچائی بتانے کے لیے ان کے پاس کچھ نہیں تھااس لیے لکھی ہوئی تقریر سنا دی.
جے آئی ٹی کو قطری کا بیان لینے قطر نہیں بانا چاہیے یہ جے آئی ٹی کے وقار کے منافی ہے.

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں