لاہور ہائیکورٹ بار ایسوسی ایشن نے گورنر پنجاب رفیق رجوانہ کی رکنیت معطل کردی

لاہور۔چودھری ذوالفقار علی کی صدارت میں لاہور ہائیکورٹ بار ایسوسی ایشن کے اجلاس کے دوران گورنر پنجاب رفیق رجوانہ کی لاہور ہائی کورٹ بار ایسوسی ایشن کی رکنیت کو معطل کرنے کی قرارداد منظور کرلی گئی لاہور ہائیکورٹ بار نے وکلاءکنونشن پر حملہ کرانے کے الزام میں گورنر پنجاب کے ہائیکورٹ بار میں داخلہ پر پابندی بھی عائد کردی واضح رہے کہ گورنر پنجاب خود بھی ایک وکیل ہیںاجلاس سے خطاب کرتے ہوئے لاہور ہائیکورٹ بار کے صدر چوہدری ذوالفقار علی نے کہا کہ ہائیکورٹ بار پر حملہ کرنے والے کسی رعایت کے مستحق نہیں ہیںلاہور ہائیکورٹ بار کے نائب صدر راشد لودھی نے اس موقع پر کہا کہ ملک بھر کے وکلاءمتحد ہیں اور ان کی طاقت اتحاد میں ہے اجلاس کے بعد وکلا نے احتجاجی کیمپ میں شرکت کی اور وزیر اعظم نواز شریف کے خلاف نعرے بازی کی لاہور ہائیکورٹ بار ایسوسی ایشن نے اعلان کیا کہ ان کا وزیراعظم نواز شریف سے استعفے کا مطالبہ برقرار ہے جبکہ وکلاءکی جانب سے ہر جمعرات کو ہائیکورٹ بار میں احتجاج بھی کیا جائے گادوسری جانب ترجمان گورنر پنجاب کا کہنا ہے کہ گورنر پنجاب رفیق رجوانہ پر وکلاءکنونشن کے حوالے سے لگائے جانے والے الزامات بے بنیاد اور حقائق منافی ہیںترجمان گورنر پنجاب کا یہ بھی کہنا تھا کہ گورنر پنجاب ایک امین شخص ہیں جو قانون کی بالادستی، وکلاءاداروں اور وکلاءکی عزت و حرمت پر پورا یقین رکھتے ہیں ترجمان نے یہ بھی کہا کہ گورنر پنجاب ایک انتہائی اہم آئینی عہدے پر فائز ہیں، وہ کسی بھی غیر آئینی اور غیر قانونی اقدام کا تصور بھی نہیں کر سکتے ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں