صحافیوں کے مریم اورنگزیب سے مطالبات

پی ایف یو جے کے صدر افضل بٹ اور سیکرٹری جنرل ایوب جان سرہندی کی ہدایت پر آرآئی یوجے اور این پی سی کے جنرل سیکرٹری،علی رضاعلوی اور عمران یعقوب ڈھلوں نے پی آراے کی قیادت کے تعاون سے پارلیمنٹ گیلری سے صحافیوں کا واک آؤٹ کرانے کے بعد وزیر اطلاعات مریم اورنگزیب کو اپنے دستخطوں کے ساتھ درج ذیل مطالبات پیش کئے۔
1-ہری پور میں قتل ہونے والے صحافی بخشیش الہی کے قاتلوں کو گرفتار کیاجائے اور لواحقین کو شہید کا معاوضہ دیا جائے۔
2-اسلام آباد کے پلاٹوں میں صحافتی کوٹہ تین فیصد تھا،جسے کم کرکے پہلے دو اور اب ایک فیصد کردیا گیا ہے،اصل کوٹہ بحال کیاجائے۔
3-اےپی پی اور غیرملکی میڈیا سے وابستہ پاکستانی صحافیوں کو پلاٹوں کے صحافتی کوٹے سے نکال دیا گیا،بحال کیاجائے ۔
4-حکومت کا آخری سال ہےہمارے باربار مطالبات کے باوجود ابھی تک حکومت نے کچھ نہیں کیا ہمارا مطالبہ ہےآٹھواں ویج بورڈ فوری طور پر تشکیل دیا جائے۔
ان مطالبات کے بعد وزیراطلاعات و نشریات مریم اورنگزیب نے قومی اسمبلی کے فلور پر مسائل حل کرنے کی یقین دہانی کرائی،اس موقع پر آرآئی یوجے کے قائم مقام صدر ناصر ہاشمی ،سیکر ٹری فنانس اصغر چوہدری ،پی آراے کے صدر قربان بلوچ ،جنرل سیکرٹری بہزاد سلیمی،واک آؤٹ کمیٹی کے چیئرمین ملک اظہر فاروق ،ممبر عثمان خان ،عرفان ملک اور پارلیمنٹ کور کرنے والے سینکڑوں صحافی موجود تھے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں