شہباز شریف کو جے آئی ٹی کے تند سوالوں کا سامنا

نیوز ویوز(اسلام آباد):جے آئی ٹی میں پیشی کے لیے شہباز شریف نیلے رنگ کے سوٹ مین ملبوس پنجاب ہاؤس سے روانہ ہوئے ان کے ہمراہ حمزہ شہباز، اسحاق ڈار اور وزیر داخلہ چوہدری نثار بھی تھے۔   چوہدری نثار ان کی گاڑی چلا رہے تھے۔

جے آئی ٹی کے سوالات کا سلسلہ جاری رہا اور شہباز شریف جب واپس آئے تو ان کے ماتھے کا پسینہ ان کی پرشانی کا گواہ تھا۔ پھر بھی ان نے میڈیا سے مختصر گفتگو میں اپنے موقف کا اعادہ کیا۔

پاناما جے آئی ٹی میں پیشی سے پہلے وزیر اعلیٰ پنجاب کی وفاقی وزیرداخلہ چوہدری نثار سے ملاقات بھی ہوئی تھی جس میں پیشی کے حوالے سے مشاورت بھی کی گئی۔

وزیراعظم نواز شریف، حسین نواز اور حسن نواز کے بعد اب وزیر اعلیٰ پنجاب شہباز شریف آج پاناما کیس کی تحقیقات کرنے والی جے آئی ٹی میں پیش ہوئے ہیں۔

شہباز شریف کی پیشی کے موقع پر 2 ہزار545 سیکورٹی اہلکار ڈیوٹی دے رہے ہیں اور جوڈیشل اکیڈمی کے اطراف کی سڑکیں بند ہیں جبکہ فیڈرل جوڈیشل اکیڈمی کے سامنے والا پارک بھی خالی کرالیا گیا ہے۔

امکان ظاہر کیا جارہا ہے کہ جے آئی ٹی میں وزیراعلیٰ پنجاب سے حمزہ شہباز کے کاروبار، اثاثوں ،ٹیکس ، گلف اسٹیل اورحدیبیہ پیپر مل سے متعلق سوالات کیے جائیں گے۔

ذرائع کے مطابق رینجرز نے فیڈرل جوڈیشل اکیڈمی کے گرد حصار بنایا ہوا ہے اور 4 ایس پی، 11 ڈی ایس پی اور 33 انسپکٹربھی تعینات ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں