شامی فوج نے کیمیائی ہتھیار استعمال کیے اس کا کوئی ثبوت نہیں.روسی صدر


روسی صدر ولادیمیر پیوٹن نے روسی ٹی ویکو انٹرویو دیتےہوئےکہاہے کہ ڈونالڈ ٹرمپ کے صدربننےکے بعد سے روس کے امریکا کے ساتھ تعلقات خراب ہوئے ہیں۔ انھوں نے شامی صدربشارالاسد کی حمایت کا جاری رکھنے کا اعادہ بھی کیا.

روسی صدر پیوٹن کا کہنا تھا کہ اعتماد کےساتھ کام کرنے سےامریکا کے ساتھ فوجی تعلقات بہتر نہیں ہوئے بلکہ بگڑے ہیں۔

روسی صدر نے شام کے صدر بشار الاسد کےمتعلق سوال کے جواب میں کہا کہ اس بات کا کیا ثبوت ہے کہ شامی فوج نے کیمیائی ہتھیار استعمال کیے؟ اس کا کوئی ثبوت نہیں لیکن اس سے بین الاقوامی قانون کی خلاف ورزی ضرور ہوئی ہے۔

انھوں نے کہا کہ ہر کوئی جانتا ہے کہ روس نے شام کے کیمیائی ہتھیاروں کے بڑے ذخیرے کو ختم کرنے کا کام پوری ذمے داری سے ادا کیا ہے۔ اگرکسی کو کوئی شک ہے تو اقوام متحدہ کے ذریعے معائنہ کرایا جاسکتا ہے۔

دوسری جانب روس نے شام کے مبینہ کیمیائی حملے سے متعلق اقوام متحدہ کی قرارداد ویٹو کردی ہے۔ قرارداد میں کیمیائی حملے کی تحقیقات سے متعلق شام سے مدد کا مطالبہ کیا گیا تھا۔

قرارداد برطانیہ، فرانس اور امریکا کی جانب سے پیش کی گئی تھی،جس میں کہا گیاتھاکہ اقوام متحدہ کے انسپکٹرز شام میں کیمیائی ہتھیاروں سے متعلق تحقیقات کریں گے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں