سابق آئی جی کے بیٹے کاملٹی نیشنل کمپنی کے ساتھ کاروبارمیں فراڈ

نیوزویوز:)لاہور ) گلبرک کے علاقہ میں سابق آئی جی کے بیٹے نے ملٹی نیشنل کمپنی کے ساتھ کاروبار کرنے پران کا مال خریدنے کے باوجود رقم ادا نہ کرنے پر کنٹری ہیڈ سمیت چارافراد پر مقدمہ درج کروادیا،مدعی نے بتایاکہ پولیس نے ملزمان کوگرفتا رتوکرلیالیکن کسی بااثرشخصیت کی مداخلت پرانصاف کی دھجیاں اڑاتے ہوئے انہیں چھوڑ دیا۔ بتایاگیاہے کہ گلبرگ پولیس نے سابق آئی جی کے بیٹے حبیب اظہر کی درخواست پر معروف مشروف کمپنی کے کنڑی ہیڈ سمیت چارافراد کے خلاف 15کروڑ سے زائد رقم کا مال خریدنے کے باوجود رقم کی ادائیگی نہ کرنے پرمقدمہ درج کروایالیکن مدعی نے الزام لگایا کہ پولیس نے ایک اہم شخصیت کی مداخلت پر ملزمان کو گرفتار کرنے کے بعد چھوڑ دیا ہے۔اس حوالے سے درج ایف آی آر میں موقف اختیار کیا گیا کہ سید حبیب اظہر مشروب کی بوتلوںکی فلنگ کے کاروبار سے منسلک ہے، میری کمپنی نے معروفمشروب کمپنی کے ذمہ د ار ان ڈاکٹر رضوان اللہ خان،حماد اسلم، عتیق خواجہ، مصطفیٰ سپرااور قیصر طاہر کوپندرہ کروڑ سے زائد رقم کی خالی بوتلیں فراہم کیںلیکن کئی ماہ گزرنے کے باوجود مجھے میری رقم نہیںدی جا رہی ہے جس پر پولیس نے مقدمہ نمبر/17 705 درج کر لیا۔اس حوالے سے مدعی نے الزام لگایاہے کہ پولیس نے ملزمان کے ساتھ ساز باز کرکے چھوڑ دیا ہے۔ا س حوالے سے ایس پی انویسٹی گیشن نے کہا ہے کہ اس معاملے کی تمام پہلوﺅں سے تفتیش ہو رہی ہے انھوں نے کہا کہ دراصل یہ مقدمہ عدالت کے حکم پر درج ہوا ہے اس لئے تفتیش کے لئے دونوں پارٹیوں کو بلایا ہے تاکہ معاملے کی حقیقت کا علم ہو سکے انھوں نے کہا کہ پولیس نے کسی کوبھی گرفتار کر کے نہیں چھوڑاہے ، اس لئے پولیس قانونی تقاضے پورے کرکے کارروائی کریگی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں