بھارت کشمیر کے معاملےپر تباہی کے راستے پر گامزن ہے.سابق وزیرآعظم فاروق عبداللہ


سرینگر: مقبوضہ کشمیر کے سابق کٹھ پتلی وزیر اعلیٰ فاروق عبداللہ کا کہنا ہے کہ مودی کی حکومت واجپائی سے کئی درجے بدتر ہے اورکشمیر کے معاملے پربھارت تباہی کی جانب بڑھ رہا ہے۔
سابق کٹھ پتلی وزیر اعلیٰ اورسربراہ نیشنل کانفرنس فاروق عبداللہ نے انٹرویو کے دوران کہا کہ کشمیر کے معاملے پر بھارت تباہی کی جانب بڑھ رہا ہے، بھارت ہمیشہ مسئلہ کشمیر پر ہٹ دھرمی دکھاتا ہے، وقت آ گیا ہے کہ کشمیر پر امریکی ثالثی کرائی جائے، پاکستان اور بھارت میں پانی کا تنازع بھی تو امریکیوں نے ہی طے کرایا تھا۔ ان کا کہنا تھا کہ پرویز مشرف کے دور میں ہمیں مسئلہ کشمیرحل ہونے کی امید ہوئی تھی جب کہ مودی کی حکومت واجپائی سے کئی درجے بدتر ہے، نہتے کشمیری مر رہے ہیں اور اگر یہی پالیسی برقرار رہی تو مقبوضہ کشمیر کا مستقبل بہت تاریک ہو گا۔
سابق کٹھ پتلی وزیر اعلیٰ فاروق عبد اللہ نے کہا کہ میرے والد جمہوریت اور برابری پر یقین رکھتے تھے، بھارت سے وادی کے الحاق میں میرے والد کا کوئی کردار نہیں تھا، میرے والد کو جلد اندازہ ہو گیا تھا بھارتی جمہوریت کھوکھلی ہے جب کہ بھارتی حکومت مجھے اور میرے والد کو شک کی نگاہ سے دیکھنےکی قیمت چکا رہے ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں