اٹلی میں ہونے والے جی 7 ممالک کے وزرائے خارجہ اجلاس میں روس کو شام کی حمایت سے روکنے کے لائحہ عمل پر غور


جی 7 ممالک کے وزرائے خارجہ اجلاس میں امریکی وزیرِ خارجہ ریکس ٹلرسن کے دورہِ ماسکو سے قبل شام کے مسئلے پر ایک متفقہ لائحہ عمل کے لیے تمام عالمی قوتوں کو راضی کرنے کے لیے کوشاں ہیں۔
ریکس ٹلرسن ماسکو جانے سے قبل مشرقِ وسطیٰ کے اپنے ہم منصبوں سے بھی ملاقات کریں گے۔
ادھر برطانیہ نے روس اور شامی فوجی اہلکار پر مخصوص پابندیاں لگانے کی تجویز بھی دی ہے۔
یہ تجویز شام میں حال ہی میں کیمیائی ہتھیاروں کے مبینہ استعمال کے بعد سامنے آئی ہے۔
شام نے باغیوں کے زیرِ قبضہ علاقوں میں کیمیائی ہتھیاروں کے استعمال سے انکار کیا ہے۔ ان حملوں میں 89 افراد ہلاک ہوئے۔
ادھر امریکہ کا کہنا ہے کہ شام میں کیمیائی ہتھیاروں کے حملوں کے جواب میں کیے گئے امریکی فضائی حملوں میں شام کے قابلِ استعمال طیاروں میں سے 20 فیصد تباہ کر دیے گئے ہیں۔
امریکہ کے وزیر دفاع جیمز میٹس کا کہنا ہے کہ شام کو کیمیائی ہتھیاروں کے دوبارہ استعمال کا مشورہ مہنگا پڑے گا۔
اٹلی میں ہونے والے جی 7 ممالک کے اجلاس میں اس بارے میں غور کیا گیا کہ روس کو کس طرح شام کے ساتھ اتحاد چھوڑنے پر قائل کیا جائے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں