افغانستان میں خلا چھوڑ نا نائن الیون کی وجہ بنا.ناصر جنجوعہ

مشیربرائے قومی سلامتی ناصر جنجوعہ نے کہا ہے کہ افغانستان میں سوویت حملہ ہمارے کہنے پر ہوا نہ نائن الیون ، دونوں واقعات کسی اور نے کیے اور نتائج ہم بھگت رہے ہیں ، سوویت حملے کے وقت سوچ تھی کہ اگلی باری ہماری ہے ۔
ان کا کہنا تھا کہ ہمارے جہاد کا نظریہ استعمال کر کے افغانستان لڑا، اس وقت افغانستان کا ساتھ نہ دیتے تو آج افغانستان بھی نہ ہوتا.

ناصر جنجوعہ کا اکادمی ادبیات اسلام آباد میں تقریب سے خطاب کر تےہوئے کہنا تھا کہ تجارتی راستہ روس کو دے دیتےتو روس آج بھی افغانستان میں ہوتا، افغانستان میں خلا چھوڑ دیا گیا ،یہیں سے نائن الیون ہوا، سیاسی طور پرطالبان کو شامل نہ کرنا کیا ہمارا قصور ہے ؟ ہم افغان طالبان کیساتھ ہیں تو پاکستانی طالبان ہمارے ساتھ کیوں لڑ رہے ہیں؟

انہوں نے کہا کہ دہشت گردی کےخلاف جنگ میں ہم نے جو پوزیشن لی اس سے بہت نقصان ہوا، پاک افغان بارڈر کا بلند ترین مقام 24ہزار فٹ بلندہے، پاکستان اور افغانستان کی سرحد 2611 کلومیٹر طویل ہے، افغان طالبان کو پاک سر زمین استعمال کرنے سے روکنے کی وجہ سے افغانستان سے ہمیں نقصان پہنچا ہے.
ناصر جنجوعہ کا کہنا تھا کہ افغانستان معصوم بن کر چلے جانا اور وہاں ہتھیاراٹھا لینا بہت آسان ہے ،30 لاکھ افغان پناہ گزینوں کو پاکستان میں رکھاہواہے، ان چیزوں کا ادراک نہ کرنےوالے پاکستان پر الزام لگا دیتے ہیں

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں